Tuesday, May 21, 2024, 10:30 PM
**ملٹری کورٹس میں سویلین کا ٹرائل کالعدم قرار **سپریم کورٹ نے فوجی عدالتوں میں شہریوں کا ٹرائل غیر قانونی قرار دے دیا **سپریم کورٹ کے5 رکنی بینچ نےمتفقہ طور پر فیصلہ سنادیا **کسی شہری کا فوجی عدالت میں ٹرائل شروع ہوگیا ہے تو وہ بھی کالعدم قرار دیا جاتا ہے، عدالت **گرفتار تمام ملزمان کا ٹرائل عام فوجداری عدالتوں میں چلایا جائے، سپریم کورٹ **آرمی ایکٹ کا سیکشن 2 ڈی ون بھی آئین سےمتصادم قرار **سائفرکیس: عمران خان اور شاہ محمود قریشی پر فرد جرم عائد **چیئرمین پی ٹی آئی اور شاہ محمود قریشی کا صحت جرم سے انکار **عدالت نے فرد جرم روکنے کی چیئرمین پی ٹی آئی کی درخواست مسترد کردی **عدالت نے کیس کے گواہان کے بیانات 27 اکتوبر کو طلب کرلیے **سائفر کیس کی سماعت 27 اکتوبر تک ملتوی کردی گئی
بریکنگ نیوز
Home اہم ترین سپریم کورٹ پریکٹس اینڈ پروسیجر ایکٹ برقرار، مخالفت میں تمام درخواستیں مسترد

سپریم کورٹ پریکٹس اینڈ پروسیجر ایکٹ برقرار، مخالفت میں تمام درخواستیں مسترد

عدالت عظمیٰ نے 5-10 سے فیصلہ سنا دیا، اپیل کا اطلاق ماضی کے کیسز پر نہیں ہوگا

by NWMNewsDesk
0 comment

سپریم کورٹ آف پاکستان نے پریکٹس اینڈ پروسیجر ایکٹ کو برقرار رکھتے ہوئے پارلیمنٹ کی قانون سازی کو درست قرار دے دیا، ایکٹ کیخلاف عدالت عظمیٰ میں دائر تمام درخواستیں مسترد کر دی گئیں۔ چیف جسٹس نے 5-10 کی اکثریت سے دیا گیا فیصلہ پڑھ کر سنایا۔

چیف جسٹس سپریم کورٹ جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے سپریم کورٹ پریکٹس اینڈ پروسیجر ایکٹ پر فیصلہ سناتے ہوئے کہا کہ تاخیر کیلئے معذرت چاہتے ہیں، معاملہ بہت تکنیکی تھا۔

عدالت عظمیٰ کے فیصلے میں کہا گیا ہے کہ پارلیمنٹ سے منظور کیا گیا سپریم کورٹ پریکٹس اینڈ پروسیجر ایکٹ برقرار رہے گا، اپیل کا اطلاق ماضی سے نہیں ہوگا۔

فیصلے کے مطابق اپیل کا ماضی کے فیصلوں پر اطلاق والی شق 8 کے مقابلے میں 7 سے کالعدم قرار دیدی گئی جبکہ آرٹیکل 184/3 کے تحت اپیل کا حق 9 کے مقابلے میں 6 سے برقرار رکھا گیا ہے۔

banner

فیصلے میں مزید کہا گیا ہے کہ سپریم کورٹ پریکٹس اینڈ پروسیجر ایکٹ میں اپیلوں کا اطلاق ماضی پر لاگو نہیں ہوگا۔

سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد پریکٹس اینڈ پروسیجر ایکٹ کا نفاذ ہوگیا، سپریم کورٹ نے ایکٹ پر حکم امتناعی دے رکھا تھا۔

رپورٹ کے مطابق سپریم کورٹ پریکٹس اینڈ پروسیجر بل برقرار رکھنے کے فیصلے سے جسٹس اعجاز الاحسن، جسٹس مظاہر نقوی، جسٹس منیب اختر اور جسٹس عائشہ ملک نے اختلاف کیا۔

پریکٹس اینڈ پروسیجر ایکٹ میں اپیل کا حق ماضی سے دینے کی شق 8/7 کی اکثریت سے کالعدم قرار دی گئی، اس فیصلے سے چیف جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے اختلاف کیا۔

مزید پڑھیے

مضامین

بلاگز

کوئک لنکز

رازداری کی پالیسی
رائے
رابطہ کریں
اشتہارات

سائنس و ٹیکنالوجیگوگل سرچ میں صارفین کے تحفظ کے لیے 3 بہترین پرائیویسی فیچرز کا اضافہگوگل سرچ میں صارفین کے تحفظ کے لیے 3 بہترین پرائیویسی فیچرز کا اضافہ
دم توڑتے ستارے کی دنگ کر دینے والی تصاویر
واٹس ایپ کا نیا فیچر جو اس کی ایک بڑی خامی دور کر دے گا
کچھ عرصے سے گوگل اکاؤنٹ استعمال نہیں کیا؟ تو وہ اس تاریخ کو ڈیلیٹ ہو جائے گا

 جملہ حقوق محفوظ ہیں   News World Media. © 2023