Tuesday, May 21, 2024, 10:38 PM
**ملٹری کورٹس میں سویلین کا ٹرائل کالعدم قرار **سپریم کورٹ نے فوجی عدالتوں میں شہریوں کا ٹرائل غیر قانونی قرار دے دیا **سپریم کورٹ کے5 رکنی بینچ نےمتفقہ طور پر فیصلہ سنادیا **کسی شہری کا فوجی عدالت میں ٹرائل شروع ہوگیا ہے تو وہ بھی کالعدم قرار دیا جاتا ہے، عدالت **گرفتار تمام ملزمان کا ٹرائل عام فوجداری عدالتوں میں چلایا جائے، سپریم کورٹ **آرمی ایکٹ کا سیکشن 2 ڈی ون بھی آئین سےمتصادم قرار **سائفرکیس: عمران خان اور شاہ محمود قریشی پر فرد جرم عائد **چیئرمین پی ٹی آئی اور شاہ محمود قریشی کا صحت جرم سے انکار **عدالت نے فرد جرم روکنے کی چیئرمین پی ٹی آئی کی درخواست مسترد کردی **عدالت نے کیس کے گواہان کے بیانات 27 اکتوبر کو طلب کرلیے **سائفر کیس کی سماعت 27 اکتوبر تک ملتوی کردی گئی
بریکنگ نیوز
Home اہم ترین اراکین پارلیمنٹ کا احتساب کیسے بنیادی حقوق کا مسئلہ ہے؟، جسٹس منصورکا اختلافی نوٹ

اراکین پارلیمنٹ کا احتساب کیسے بنیادی حقوق کا مسئلہ ہے؟، جسٹس منصورکا اختلافی نوٹ

بنیادی سوال نیب ترامیم نہیں،پارلیمان کی بالادستی ہے

by NWMNewsDesk
0 comment

اکثریتی فیصلہ چیف جسٹس پاکستان عمرعطا بندیال نے تحریر کیا ہے جبکہ فیصلے میں 2 صفحات پر مشتمل جسٹس منصور علی شاہ کا اختلافی نوٹ بھی شامل ہے۔

جسٹس منصور علی شاہ نے اختلافی نوٹ میں کہا ہے کہ اکثریتی فیصلہ کل رات کو موصول ہوا، اکثریتی فیصلے سے اتفاق نہیں کرتا، اتنے کم وقت میں اختلاف کی وجوہات تحریرنہیں کرسکتا، تفصیلی اختلافی نوٹ بعد میں جاری کروں گا۔

جسٹس منصور علی شاہ کا کہنا تھاکہ میرے نزدیک کیس کا بنیادی سوال نیب ترامیم نہیں،پارلیمان کی بالادستی ہے، پارلیمان پاکستان کے 24 کروڑ عوام کے چنے گئے نمائندوں کا ایوان ہے، یہ سوال پارلیمانی آئینی جمہوریت کی اہمیت کا ہے، یہ سوال ریاست کے 3 ستونوں اور طاقت کی تقسیم کا ہے، یہ معاملہ محدودعدالتی حدود کا ہے جس میں غیرمنتخب ججز ہوتے ہیں۔

انہوں نے اختلافی نوٹ میں قرار دیاکہ بنیادی حقوق سمیت کسی قانون کی واضح خلاف ورزی نہیں ہوئی، فیصلہ منتخب نمائندوں کے ذریعے اختیارات کے استعمال کےآئینی اصول سےمطابقت نہیں رکھتا، فیصلہ اختیارات کی تقسیم کے اصول سے مطابقت نہیں رکھتا۔

banner

جسٹس منصور علی شاہ کا کہنا تھاکہ یہ طےنہیں کیاگیا کہ اراکین پارلیمنٹ کا احتساب کیسے بنیادی حقوق کا مسئلہ ہے، نیب قانون کا اکثریتی فیصلہ خود بنیادی آئینی حقوق کی خلاف ورزی ہے۔ پارلیمان کے پاس قانون واپس لینےکا بھی اختیار ہے لہٰذا ساتھی ججز کےفیصلے سےاختلاف کرتےہوئےاس پٹیشن کو مستردکرتاہوں۔

مزید پڑھیے

مضامین

بلاگز

کوئک لنکز

رازداری کی پالیسی
رائے
رابطہ کریں
اشتہارات

سائنس و ٹیکنالوجیگوگل سرچ میں صارفین کے تحفظ کے لیے 3 بہترین پرائیویسی فیچرز کا اضافہگوگل سرچ میں صارفین کے تحفظ کے لیے 3 بہترین پرائیویسی فیچرز کا اضافہ
دم توڑتے ستارے کی دنگ کر دینے والی تصاویر
واٹس ایپ کا نیا فیچر جو اس کی ایک بڑی خامی دور کر دے گا
کچھ عرصے سے گوگل اکاؤنٹ استعمال نہیں کیا؟ تو وہ اس تاریخ کو ڈیلیٹ ہو جائے گا

 جملہ حقوق محفوظ ہیں   News World Media. © 2023