Friday, June 14, 2024, 9:01 AM
**ملٹری کورٹس میں سویلین کا ٹرائل کالعدم قرار **سپریم کورٹ نے فوجی عدالتوں میں شہریوں کا ٹرائل غیر قانونی قرار دے دیا **سپریم کورٹ کے5 رکنی بینچ نےمتفقہ طور پر فیصلہ سنادیا **کسی شہری کا فوجی عدالت میں ٹرائل شروع ہوگیا ہے تو وہ بھی کالعدم قرار دیا جاتا ہے، عدالت **گرفتار تمام ملزمان کا ٹرائل عام فوجداری عدالتوں میں چلایا جائے، سپریم کورٹ **آرمی ایکٹ کا سیکشن 2 ڈی ون بھی آئین سےمتصادم قرار **سائفرکیس: عمران خان اور شاہ محمود قریشی پر فرد جرم عائد **چیئرمین پی ٹی آئی اور شاہ محمود قریشی کا صحت جرم سے انکار **عدالت نے فرد جرم روکنے کی چیئرمین پی ٹی آئی کی درخواست مسترد کردی **عدالت نے کیس کے گواہان کے بیانات 27 اکتوبر کو طلب کرلیے **سائفر کیس کی سماعت 27 اکتوبر تک ملتوی کردی گئی
بریکنگ نیوز
Home اہم ترین گولڈ مافیا کیخلاف کریک ڈاؤن کیلئے انٹیلیجنس ایجنسیز پر مشتمل ٹاسک فورس تشکیل

گولڈ مافیا کیخلاف کریک ڈاؤن کیلئے انٹیلیجنس ایجنسیز پر مشتمل ٹاسک فورس تشکیل

سونے کی خرید و فروخت کو کمپیوٹرائزڈ کرنے کے لیے بھی ہنگامی بنیادوں پر کام کا آغاز

by NWMNewsDesk
0 comment

گولڈ مافیا کے خلاف کریک ڈاؤن کیلئے قانون نافذ کرنے والے اداروں اور انٹیلی جنس ایجنسیز پر مشتمل ٹاسک فورس بنادی گئی۔

ذرائع کے مطابق ٹاسک فورس کا مقصد سونے کے اسمگلرز اور مافیا کو پکڑ کر قانونی کارروائی کرنا ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ ٹاسک فورس نے سونا اسمگلنگ کرنے والے مافیا اور اسمگلرز کی لسٹیں تیار کرلی ہیں جبکہ گولڈ ڈیلرز کو ٹیکس نیٹ میں لانے کے لیے کام شروع کر دیا گیا ہے۔

ذرائع کے مطابق سونے کی خرید و فروخت کو کمپیوٹرائزڈ کرنے کے لیے بھی ہنگامی بنیادوں پر کام شروع کردیا گیا ہے جس کا فائدہ عام شہری اور ملک کو ہو گا۔

banner

واضح رہے کہ سونے کی قیمت پہلے ہی مارکیٹ میں نیچے گر رہی ہے۔

مزید پڑھیے

مضامین

بلاگز

کوئک لنکز

رازداری کی پالیسی
رائے
رابطہ کریں
اشتہارات

سائنس و ٹیکنالوجیگوگل سرچ میں صارفین کے تحفظ کے لیے 3 بہترین پرائیویسی فیچرز کا اضافہگوگل سرچ میں صارفین کے تحفظ کے لیے 3 بہترین پرائیویسی فیچرز کا اضافہ
دم توڑتے ستارے کی دنگ کر دینے والی تصاویر
واٹس ایپ کا نیا فیچر جو اس کی ایک بڑی خامی دور کر دے گا
کچھ عرصے سے گوگل اکاؤنٹ استعمال نہیں کیا؟ تو وہ اس تاریخ کو ڈیلیٹ ہو جائے گا

 جملہ حقوق محفوظ ہیں   News World Media. © 2023