Monday, June 24, 2024, 12:04 PM
**ملٹری کورٹس میں سویلین کا ٹرائل کالعدم قرار **سپریم کورٹ نے فوجی عدالتوں میں شہریوں کا ٹرائل غیر قانونی قرار دے دیا **سپریم کورٹ کے5 رکنی بینچ نےمتفقہ طور پر فیصلہ سنادیا **کسی شہری کا فوجی عدالت میں ٹرائل شروع ہوگیا ہے تو وہ بھی کالعدم قرار دیا جاتا ہے، عدالت **گرفتار تمام ملزمان کا ٹرائل عام فوجداری عدالتوں میں چلایا جائے، سپریم کورٹ **آرمی ایکٹ کا سیکشن 2 ڈی ون بھی آئین سےمتصادم قرار **سائفرکیس: عمران خان اور شاہ محمود قریشی پر فرد جرم عائد **چیئرمین پی ٹی آئی اور شاہ محمود قریشی کا صحت جرم سے انکار **عدالت نے فرد جرم روکنے کی چیئرمین پی ٹی آئی کی درخواست مسترد کردی **عدالت نے کیس کے گواہان کے بیانات 27 اکتوبر کو طلب کرلیے **سائفر کیس کی سماعت 27 اکتوبر تک ملتوی کردی گئی
بریکنگ نیوز
Home اہم ترین نئے چیف جسٹس آف پاکستان قاضی فائز عیسیٰ کون ہیں؟

نئے چیف جسٹس آف پاکستان قاضی فائز عیسیٰ کون ہیں؟

جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نےکئی اہم مقدمات انتہائی اہم فیصلے تحریر کئے

by NWMNewsDesk
0 comment

جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کے عدالتی کیئرئر پر ایک نظر ڈالتے ہیں۔

جسٹس قاضی فائز عیسیٰ 26 اکتوبر 1959 کو کوئٹہ میں پیدا ہوئے، ابتدائی تعلیم کوئٹہ سے حاصل کی، کراچی کے کراچی گرائمر سکول سے اے، او لیول مکمل کیا۔ برطانیہ کے انز آف کورٹ سکول آف لاء سے بار پروفیشنل اگزامینیشن مکمل کیا۔

جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کا عدالتی کیریئر بطور جسٹس

جسٹس فائز عیسیٰ 5 اگست 2009 کو براہ راست بلوچستان ہائیکورٹ کے چیف جسٹس فائز ہوئے، جج مقرر ہونے سے قبل 27 سال تک وکالت کے شعبے سے وابستہ رہے۔5 ستمبر 2014 کو سپریم کورٹ آف پاکستان کے جج کی حیثیت سے حلف اٹھایا

جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کے اہم فیصلے

جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے اس عرصے کے دوران کئی اہم مقدمات میں انتہائی اہم فیصلے تحریر کئے۔پبلک پارکوں کے استعمال، ماحولیات، خواتین کے وراثتی حقوق، فیض آباد دھرنا کیس سے متعلق اہم فیصلے دیئے، انہوں نے نومبر 2007ء میں سابق صدر پرویز مشرف کی جانب سے لگائی گئی ایمرجنسی اور عبوری آئینی حکم کے تحت ججز کے حلف لینے کی بھی شدید مخالفت کی تھی۔

banner

میمو گیٹ کمیشن کی سربراہی

2012ء میں جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے میمو گیٹ کمیشن کی سربراہی بھی کی، کمیشن نے اس وقت امریکا میں پاکستان کے سفیر حسین حقانی کو قصوروار ٹھہرایا تھا۔

کوئٹہ خودکش دھماکہ انکوائری کمیشن

8 اگست 2016ء میں کوئٹہ میں ہونے والے خودکش دھماکے کے بعد اس کے حقائق جاننے کیلئے ایک انکوائری کمیشن بنایا گیا جس کی سربراہی بھی جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کو سونپی گئی، انکوائری کمیشن نے اپنی پیش کردہ رپورٹ میں خود کش دھماکے کو حکومت کی غفلت قرار دیا تھا

حدیبیہ پیپر ملز کیس

جسٹس قاضی فائز عیسٰی سپریم کورٹ کے اس تین رکنی بنچ کا بھی حصہ تھے جس نے دسمبر 2017ء میں سابق وزیراعظم نواز شریف اور شہبازشریف کے خلاف نیب کی اپیل کو مسترد کر دیا تھا، نیب نے حدیبیہ پیپر مل کیس میں لاہور ہائی کورٹ کے فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ سے رجوع کیا تھا، سپریم کورٹ نے اپنے فیصلے میں شریف خاندان کو ایک ارب 20 کروڑ روپے کی کرپشن کے الزام سے بری کر دیا تھا۔

فیض آباد دھرنا کیس کا فیصلہ

جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے تحریک لبیک پاکستان کے فیض آباد دھرنا کیس کا فیصلہ بھی دیا، عدالت نے کہا آئین مسلح فورسز کے افراد کو کسی طرح کی بھی سیاسی سرگرمی، سیاسی جماعت، گروہ یا فرد کی حمایت سے منع کرتا ہے۔ حکومت پاکستان حلف کی خلاف ورزی کرنے والے اہلکاروں کے خلاف کارروائی کرے۔

فوجی عدالتوں کے قیام کی مخالفت

سپریم کورٹ کی فل کورٹ نے جب 2015ء میں چیف جسٹس ناصر الملک کی سربراہی میں فوجی عدالتوں کے قیام کے حق میں فیصلہ دیا تو جسٹس قاضی فائز عیسیٰ ان چھ ججوں میں شامل تھے جنہوں نے فوجی عدالتوں کی مخالفت کی تھی۔

مزید پڑھیے

مضامین

بلاگز

کوئک لنکز

رازداری کی پالیسی
رائے
رابطہ کریں
اشتہارات

سائنس و ٹیکنالوجیگوگل سرچ میں صارفین کے تحفظ کے لیے 3 بہترین پرائیویسی فیچرز کا اضافہگوگل سرچ میں صارفین کے تحفظ کے لیے 3 بہترین پرائیویسی فیچرز کا اضافہ
دم توڑتے ستارے کی دنگ کر دینے والی تصاویر
واٹس ایپ کا نیا فیچر جو اس کی ایک بڑی خامی دور کر دے گا
کچھ عرصے سے گوگل اکاؤنٹ استعمال نہیں کیا؟ تو وہ اس تاریخ کو ڈیلیٹ ہو جائے گا

 جملہ حقوق محفوظ ہیں   News World Media. © 2023